مری شام غم کو وہ بہلا رہے ہیں

اختر شیرانی

مری شام غم کو وہ بہلا رہے ہیں

اختر شیرانی

MORE BYاختر شیرانی

    مری شام غم کو وہ بہلا رہے ہیں

    لکھا ہے یہ خط میں کہ ہم آ رہے ہیں

    ٹھہر جا ذرا اور اے درد فرقت

    ہمارے تصور میں وہ آ رہے ہیں

    غم عاقبت ہے نہ فکر زمانہ

    پئے جا رہے ہیں جئے جا رہے ہیں

    نہیں شکوۂ تشنگی مے کشوں کو

    وہ آنکھوں سے مے خانے برسا رہے ہیں

    وہ رشک بہار آنے والا ہے اخترؔ

    کنول حسرتوں کے کھلے جا رہے ہیں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    ملکہ پکھراج

    ملکہ پکھراج

    مآخذ:

    • کتاب : Junoon (Pg. 18)
    • Author : Naseem Muqri
    • مطبع : Naseem Muqri (1990)
    • اشاعت : 1990

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY