مری طرف سے نگاہیں تو وہ ہٹا لے گا

محمد علی ساحل

مری طرف سے نگاہیں تو وہ ہٹا لے گا

محمد علی ساحل

MORE BYمحمد علی ساحل

    مری طرف سے نگاہیں تو وہ ہٹا لے گا

    وہ اپنے ذہن سے کیسے مجھے نکالے گا

    لبوں پہ پھول محبت کے جو سجا لے گا

    اسے حریف بھی بڑھ کر گلے لگا لے گا

    گنہ گار نہ بن اس کو بد دعا دے کر

    غرور اس کا اسے خود ہی مار ڈالے گا

    ہر ایک آگ کو وہ روشنی سمجھتا ہے

    میں چوک جاؤں تو وہ انگلیاں جلا لے گا

    بہت سنبھال کے رکھا ہے آنسوؤ تم کو

    مری طرح تمہیں آنکھوں میں کون پالے گا

    اگر جنون کی حد سے گزر گیا دریا

    تو اپنے ساتھ وہ ساحلؔ کو بھی بہا لے گا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    محمد علی ساحل

    محمد علی ساحل

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY