مٹی جب تک نم رہتی ہے

رسا چغتائی

مٹی جب تک نم رہتی ہے

رسا چغتائی

MORE BYرسا چغتائی

    مٹی جب تک نم رہتی ہے

    خوشبو تازہ دم رہتی ہے

    اپنی رو میں مست و غزل خواں

    موج ہوائے غم رہتی ہے

    ان جھیل سی گہری آنکھوں میں

    اک لہر سی ہر دم رہتی ہے

    ہر ساز جدا کیوں ہوتا ہے

    کیوں سنگت باہم رہتی ہے

    کیوں آنگن ٹیڑھا لگتا ہے

    کیوں پایل برہم رہتی ہے

    اب ایسے سرکش قامت پر

    کیوں تیغ مژہ خم رہتی ہے

    کیوں آپ پریشاں رہتے ہیں

    کیوں آنکھ رساؔ نم رہتی ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY