aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

محبت کا کوئی تو پیمان ہوتا

یٰسین بھٹی

محبت کا کوئی تو پیمان ہوتا

یٰسین بھٹی

MORE BYیٰسین بھٹی

    محبت کا کوئی تو پیمان ہوتا

    کہ جن پہ ہمیں بھی بہت مان ہوتا

    کبھی اتنے ارزاں نہ ہوتے جہاں میں

    ہمیں زندگی کا جو عرفان ہوتا

    تجھے کاش رکھتے تصور میں اپنے

    کہ ان کے بہلنے کا سامان ہوتا

    رہ زندگی میں کبھی نہ کبھی تو

    تجھے ڈھونڈ لیتے جو امکان ہوتا

    کسی سے تعلق بناتے نہ اتنا

    کسی سے نہ ملنے کا ارمان ہوتا

    اگر اپنی مٹی پہ یاسینؔ رہتے

    کہاں ہجرتوں کا یہ طوفان ہوتا

    مأخذ:

    اردو غزل کا مغربی دریچہ(یورپ اور امریکہ کی اردو غزل کا پہلا معتبر ترین انتخاب) (Pg. 474)

      • ناشر: کتاب سرائے بیت الحکمت لاہور کا اشاعتی ادارہ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے