محبت میں یہ کیا مقام آ رہے ہیں

جگر مراد آبادی

محبت میں یہ کیا مقام آ رہے ہیں

جگر مراد آبادی

MORE BYجگر مراد آبادی

    محبت میں یہ کیا مقام آ رہے ہیں

    کہ منزل پہ ہیں اور چلے جا رہے ہیں

    یہ کہہ کہہ کے ہم دل کو بہلا رہے ہیں

    وہ اب چل چکے ہیں وہ اب آ رہے ہیں

    وہ از خود ہی نادم ہوئے جا رہے ہیں

    خدا جانے کیا کیا خیال آ رہے ہیں

    ہمارے ہی دل سے مزے ان کے پوچھو

    وہ دھوکے جو دانستہ ہم کھا رہے ہیں

    جفا کرنے والوں کو کیا ہو گیا ہے

    وفا کر کے بھی ہم تو شرما رہے ہیں

    وہ عالم ہے اب یارو اغیار کیسے

    ہمیں اپنے دشمن ہوئے جا رہے ہیں

    مزاج گرامی کی ہو خیر یارب

    کئی دن سے اکثر وہ یاد آ رہے ہیں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    نامعلوم

    نامعلوم

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY