محبتوں کا صلہ نہیں ہے

نجمہ شاہین کھوسہ

محبتوں کا صلہ نہیں ہے

نجمہ شاہین کھوسہ

MORE BYنجمہ شاہین کھوسہ

    محبتوں کا صلہ نہیں ہے

    لبوں پہ حرف دعا نہیں ہے

    نہیں وہ تصویر پاس میرے

    سو ہاتھ میرا جلا نہیں ہے

    میں اپنی لو میں ہی جل رہی ہوں

    جو بجھ گیا وہ دیا نہیں ہے

    بس اک پیالی ہے میز پر اور

    وہ منتظر اب مرا نہیں ہے

    لکھا جنم دن پہ اس کو میں نے

    وہ خط بھی اس کو ملا نہیں ہے

    میں کس لیے پار جاؤں شاہینؔ

    وہاں مرا نا خدا نہیں ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY