مجھ کو اب ساقیٔ گلفام سے کچھ کام نہیں

امام بخش ناسخ

مجھ کو اب ساقیٔ گلفام سے کچھ کام نہیں

امام بخش ناسخ

MORE BYامام بخش ناسخ

    مجھ کو اب ساقیٔ گلفام سے کچھ کام نہیں

    مے سے کچھ کام نہیں جام سے کچھ کام نہیں

    دل میں خوش آئی ہیں صحرا کی ببولیں پر خار

    اب کسی سرو گل اندام سے کچھ کام نہیں

    اپنے آرام سے ہوں دشت جنوں میں تنہا

    کسی محبوب دل آرام سے کچھ کام نہیں

    خانہ برباد ہوں صحرا میں بگولوں کی طرح

    سقف و دیوار و در و بام سے کچھ کام نہیں

    طائر روح رمیدہ کی طرح چھوٹا ہوں

    اب تو صیاد ترے دام سے کچھ کام نہیں

    طبع روشن کو نہیں خوف سیہ روزی کا

    صبح محشر ہوں مجھے شام سے کچھ کام نہیں

    اتنی مدت سے ہوں غربت میں وطن بھول گیا

    مجھ کو اب نامہ و پیغام سے کچھ کام نہیں

    ہے فراق بت خود کام میں ناسخؔ کا کلام

    ہوں میں ناکام مجھے کام سے کچھ کام نہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY