مجھ کو اوروں سے کوئی شکوا نہیں

علقمہ شبلی

مجھ کو اوروں سے کوئی شکوا نہیں

علقمہ شبلی

MORE BYعلقمہ شبلی

    مجھ کو اوروں سے کوئی شکوا نہیں

    میں نے بھی تو خود کو پہچانا نہیں

    سر پہ آ پہنچا ہے سورج کرب کا

    ساتھ اپنے سایہ بھی اپنا نہیں

    شوق منزل ہی ہے میرا خضر راہ

    نقش پا ہر موڑ پر ملتا نہیں

    ہو گیا خون‌ حیات اب یوں سفید

    جیسے میرا اس سے کچھ رشتہ نہیں

    ہے خیال خام وہ میں نے جسے

    پیرہن الفاظ کا بخشا نہیں

    اب ہے چہروں پر نقاب مصلحت

    کوئی چہرہ دل کا آئینہ نہیں

    کیوں نہ ہو شعلہ بدامن زندگی

    کس طرف اب آگ کا دریا نہیں

    پھول کی اک پنکھڑی کہئے اسے

    زندگی اک برگ آوارہ نہیں

    ذہن شبلیؔ میں ہے اس کی گونج بھی

    وقت کے ہونٹوں پہ جو نغمہ نہیں

    مآخذ:

    • کتاب : Be-Chehrah Lamhe (Pg. 50)
    • Author : Alqama Shibli
    • مطبع : Shaharyaar Brothers Publications (1975)
    • اشاعت : 1975

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY