مجھے خبر تھی مرا انتظار گھر میں رہا

ساقی فاروقی

مجھے خبر تھی مرا انتظار گھر میں رہا

ساقی فاروقی

MORE BY ساقی فاروقی

    مجھے خبر تھی مرا انتظار گھر میں رہا

    یہ حادثہ تھا کہ میں عمر بھر سفر میں رہا

    میں رقص کرتا رہا ساری عمر وحشت میں

    ہزار حلقۂ زنجیر بام و در میں رہا

    ترے فراق کی قیمت ہمارے پاس نہ تھی

    ترے وصال کا سودا ہمارے سر میں رہا

    یہ آگ ساتھ نہ ہوتی تو راکھ ہو جاتے

    عجیب رنگ ترے نام سے ہنر میں رہا

    اب ایک وادئ نسیاں میں چھپتا جاتا ہے

    وہ ایک سایہ کہ یادوں کی رہ گزر میں رہا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites