مجھے قرار بھنور میں اسے کنارے میں

صابر

مجھے قرار بھنور میں اسے کنارے میں

صابر

MORE BYصابر

    مجھے قرار بھنور میں اسے کنارے میں

    سو کتنی دور تلک بہتے ایک دھارے میں

    مجھے بھی پڑ گئی عادت دروغ گوئی کی

    وہ مجھ سے پوچھتا رہتا تھا میرے بارے میں

    یہ کاروبار محبت ہے تم نہ سمجھوگے

    ہوا ہے مجھ کو بہت فائدہ خسارے میں

    کہاں رہا وہ گمان اب کہ ہیں زمانہ شناس

    الجھ کے رہ گئے ذو معنی اک اشارے میں

    عجیب بات سہی خود کو داد فن دینا

    کسی کے لمس کی خوشبو ہے استعارے میں

    RECITATIONS

    صابر

    صابر

    صابر

    مجھے قرار بھنور میں اسے کنارے میں صابر

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY