منہ زبانی قرآن پڑھتے تھے

محمد علوی

منہ زبانی قرآن پڑھتے تھے

محمد علوی

MORE BYمحمد علوی

    منہ زبانی قرآن پڑھتے تھے

    پہلے بچے بھی کتنے بوڑھے تھے

    اک پرندہ سنا رہا تھا غزل

    چار چھ پیڑ مل کے سنتے تھے

    جن کو سوچا تھا اور دیکھا بھی

    ایسے دو چار ہی تو چہرے تھے

    اب تو چپ چاپ شام آتی ہے

    پہلے چڑیوں کے شور ہوتے تھے

    رات اترا تھا شاخ پر اک گل

    چار سو خوشبوؤں کے پہرے تھے

    آج کی صبح کتنی ہلکی ہے

    یاد پڑتا ہے رات روئے تھے

    یہ کہاں دوستوں میں آ بیٹھے

    ہم تو مرنے کو گھر سے نکلے تھے

    یہ بھی دن ہیں کہ آگ گرتی ہے

    وہ بھی دن تھے کہ پھول برسے تھے

    اب وہ لڑکی نظر نہیں آتی

    ہم جسے روز دیکھ لیتے تھے

    آنکھیں کھولیں تو کچھ نہ تھا علویؔ

    بند آنکھوں میں لاکھوں جلوے تھے

    موضوعات:

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY