مشتاق ہیں عشاق تری بانکی ادا کے

ولی محمد ولی

مشتاق ہیں عشاق تری بانکی ادا کے

ولی محمد ولی

MORE BYولی محمد ولی

    مشتاق ہیں عشاق تری بانکی ادا کے

    زخمی ہیں محباں تری شمشیر جفا کے

    ہر پیچ میں چیرے کے ترے لپٹے ہیں عاشق

    عالم کے دلاں بند ہیں تجھ بند قبا کے

    لرزاں ہے ترے دست اگے پنجۂ خورشید

    تجھ حسن اگے مات ملائک ہیں سما کے

    تجھ زلف کے حلقے میں ہے دل بے سر و بے پا

    ٹک مہر کرو حال اپر بے سر و پا کے

    تنہا نہ ولیؔ جگ منیں لکھتا ہے ترے وصف

    دفتر لکھے عالم نے تری مدح و ثنا کے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY