نہ بت کدے میں نہ کعبے میں سر جھکانے سے

فرید جاوید

نہ بت کدے میں نہ کعبے میں سر جھکانے سے

فرید جاوید

MORE BYفرید جاوید

    نہ بت کدے میں نہ کعبے میں سر جھکانے سے

    سکوں ملا ہے تری انجمن میں آنے سے

    مرے جنوں کو محبت سے دیکھنے والے

    ذرا نگاہ بچائے ہوئے زمانے سے

    میں مسکرا تو دیا ان کی بے نیازی پر

    یہ کیا کہ دل پہ لگی چوٹ مسکرانے سے

    بہت کیا ہے حقیقت کی تلخیوں سے گریز

    مگر بہل نہ سکا دل کسی فسانے سے

    خوشا کہ عہد قفس میں بھی زندگی کے لیے

    نگاہ کھیلتی رہتی ہے آشیانے سے

    اداس دل کو سہارا نہ مل سکا جاویدؔ

    اندھیری شب میں ستاروں کے جگمگانے سے

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY