نہ دل بھرا ہے نہ اب نم رہا ہے آنکھوں میں

قائم چاندپوری

نہ دل بھرا ہے نہ اب نم رہا ہے آنکھوں میں

قائم چاندپوری

MORE BYقائم چاندپوری

    نہ دل بھرا ہے نہ اب نم رہا ہے آنکھوں میں

    کبھو جو روئے تھے خوں جم رہا ہے آنکھوں میں

    میں مر چکا ہوں پہ تیرے ہی دیکھنے کے لیے

    حباب وار تنک دم رہا ہے آنکھوں میں

    موافقت کی بہت شہریوں سے میں لیکن

    وہی غزال ابھی رم رہا ہے آنکھوں میں

    وہ محو ہوں کہ مثال حباب آئینہ

    جگر سے اشک نکل تھم رہا ہے آنکھوں میں

    بسان اشک ہے قائمؔ تو جب سے آوارہ

    وقار تب سے ترا کم رہا ہے آنکھوں میں

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    سیان چودھری

    سیان چودھری

    RECITATIONS

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    فصیح اکمل

    نہ دل بھرا ہے نہ اب نم رہا ہے آنکھوں میں فصیح اکمل

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY