نہ فیصلہ تمہارا ہے نہ فیصلہ ہمارا ہے

احمد سجاد بابر

نہ فیصلہ تمہارا ہے نہ فیصلہ ہمارا ہے

احمد سجاد بابر

MORE BYاحمد سجاد بابر

    نہ فیصلہ تمہارا ہے نہ فیصلہ ہمارا ہے

    یہ وقت کے قزاق نے چھپا کے تیر مارا ہے

    فقیہ شہر زندگی کی آنکھ کا جو نور تھا

    وہ میں نے تیرے آستاں پہ خواب لا کے وارا ہے

    ستار گاں کی بزم میں اداس چاند دیکھنا

    نہ جانے کیسا خواب ہے نہ جانے کیا اشارہ ہے

    ہمیں یہ خواب تتلیاں تلاشنا ہیں عمر بھر

    کہ ہاتھ خالی نکلے ہیں چراغ ہے نہ تارہ ہے

    پس غبار وقت یوں پکارتا ہے کون یہ

    کہ ہجر و غم کا سلسلہ بتاؤ کیوں گوارا ہے

    سجادؔ بھی ملول ہے کہ قافلہ ہے شام کا

    فلک پہ ایک چاند ہے جو آخری سہارا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY