نہ کچھ زیادہ نہ کچھ کم ترے حوالے سے

ماجد دیوبندی

نہ کچھ زیادہ نہ کچھ کم ترے حوالے سے

ماجد دیوبندی

MORE BYماجد دیوبندی

    نہ کچھ زیادہ نہ کچھ کم ترے حوالے سے

    وہی ہے درد کا عالم ترے حوالے سے

    کھلے جو زخم کے ٹانکے تو یہ ہوا محسوس

    صبا نے رکھ دیا مرہم ترے حوالے سے

    وہی ہے دل کا تڑپنا وہی ہے کیفیت

    وہی مزاج ہے پیہم ترے حوالے سے

    چلی ہے ہجر کے موسم میں جب بھی پروائی

    ہوئی ہے آنکھ مری نم ترے حوالے سے

    خزاں کا ذکر تو میری زباں پہ تھا ہی نہیں

    بہار کرتی ہے ماتم ترے حوالے سے

    مری حیات تھی خوشیوں سے ہم کنار مگر

    ہوئے ہیں درد منظم ترے حوالے سے

    ترا حوالہ دیا تھا کہ یک بیک ماجدؔ

    زمانہ ہو گیا برہم ترے حوالے سے

    مآخذ
    • کتاب : Shaakh-e-Dil (Pg. 113)
    • Author : Dr. Majid Deobandi
    • مطبع : Anjum Book Depot, Delhi-6 (2011)
    • اشاعت : 2011

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY