نہ رستہ نہ کوئی ڈگر ہے یہاں

مخمور سعیدی

نہ رستہ نہ کوئی ڈگر ہے یہاں

مخمور سعیدی

MORE BYمخمور سعیدی

    نہ رستہ نہ کوئی ڈگر ہے یہاں

    مگر سب کی قسمت سفر ہے یہاں

    سنائی نہ دے گی دلوں کی صدا

    دماغوں میں وہ شور و شر ہے یہاں

    ہواؤں کی انگلی پکڑ کر چلو

    وسیلہ یہی معتبر ہے یہاں

    نہ اس شہر بے حس کو صحرا کہو

    سنو اک ہمارا بھی گھر ہے یہاں

    پلک بھی جھپکتے ہو مخمورؔ کیوں

    تماشا بہت مختصر ہے یہاں

    مأخذ :
    • کتاب : Junoon (Pg. 178)
    • Author : Naseem Muqri
    • مطبع : Naseem Muqri (1990)
    • اشاعت : 1990

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY