نہ سکت ہے ضبط غم کی نہ مجال اشکباری

عامر عثمانی

نہ سکت ہے ضبط غم کی نہ مجال اشکباری

عامر عثمانی

MORE BYعامر عثمانی

    نہ سکت ہے ضبط غم کی نہ مجال اشکباری

    یہ عجیب کیفیت ہے نہ سکوں نہ بے قراری

    ترا ایک ہی ستم ہے ترے ہر کرم پہ بھاری

    غم دو جہاں سے دے دی مجھے تو نے رستگاری

    مری زندگی کا حاصل ترے غم کی پاسداری

    ترے غم کی آبرو ہے مجھے ہر خوشی سے پیاری

    یہ قدم قدم بلائیں یہ سواد کوئے جاناں

    وہ یہیں سے لوٹ جائے جسے زندگی ہو پیاری

    ترے جاں نواز وعدے مجھے کیا فریب دیتے

    ترے کام آ گئی ہے مری زود اعتباری

    مری رات منتظر ہے کسی اور صبح نو کی

    یہ سحر تجھے مبارک جو ہے ظلمتوں کی ماری

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY