ناکامی قسمت کا گلہ چھوڑ دیا ہے

مظفر رزمی

ناکامی قسمت کا گلہ چھوڑ دیا ہے

مظفر رزمی

MORE BYمظفر رزمی

    ناکامی قسمت کا گلہ چھوڑ دیا ہے

    تدبیر سے تقدیر کا رخ موڑ دیا ہے

    وہ جرم بھی اک عظمت کردار ہے جس نے

    ٹوٹا ہوا اک رشتۂ دل جوڑ دیا ہے

    دل ڈوب چلا آخر شب خشک ہیں آنکھیں

    آ جا کہ ستاروں نے بھی دم توڑ دیا ہے

    بہتے ہوئے دیکھے ہیں ادھر وقت کے دھارے

    رخ ہم نے ارادوں کا جدھر موڑ دیا ہے

    فن کار کا احساس ضیابار تھا جس میں

    حالات نے وہ شیش محل توڑ دیا ہے

    انداز غزل آپ کا کیا خوب ہے رزمیؔ

    محسوس یہ ہوتا ہے قلم توڑ دیا ہے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    ناکامی قسمت کا گلہ چھوڑ دیا ہے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY