ناصحا کر نہ اسے سی کے پشیماں مجھ کو

قائم چاندپوری

ناصحا کر نہ اسے سی کے پشیماں مجھ کو

قائم چاندپوری

MORE BYقائم چاندپوری

    ناصحا کر نہ اسے سی کے پشیماں مجھ کو

    کتنے ہی چاک ابھی کرنے ہیں گریباں مجھ کو

    وحشت دل کوئی شہروں میں سما سکتی ہے

    کاش لے جائے جنوں سوئے بیاباں مجھ کو

    اہل مسجد نے جو کافر مجھے سمجھا تو کیا

    ساکن دیر تو جانے ہیں مسلماں مجھ کو

    میں سر مو نہیں جوں زلف کسی سے شاکی

    بادہ دستی نے کیا میری پریشاں مجھ کو

    سچ کہو کس سے ہے یہ نین کھلانے کا شوق

    بھیجتے ہو جو پئے سرمہ صفاہاں مجھ کو

    یاں تلک خوش ہوں امارد سے کہ اے رب کریم

    کاش دے حور کے بدلے بھی تو غلماں مجھ کو

    مفت تک تو کوئی قائمؔ نہیں لینے کا یہ جنس

    کہہ فلک سے کرے کچھ اور بھی ارزاں مجھ کو

    مأخذ :
    • Deewan-e-Qaem Chandpuri (Rekhta Website)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY