نہیں کہ اپنا زمانہ بھی تو نہیں آیا

وسیم بریلوی

نہیں کہ اپنا زمانہ بھی تو نہیں آیا

وسیم بریلوی

MORE BYوسیم بریلوی

    نہیں کہ اپنا زمانہ بھی تو نہیں آیا

    ہمیں کسی سے نبھانا بھی تو نہیں آیا

    جلا کے رکھ لیا ہاتھوں کے ساتھ دامن تک

    تمہیں چراغ بجھانا بھی تو نہیں آیا

    نئے مکان بنائے تو فاصلوں کی طرح

    ہمیں یہ شہر بسانا بھی تو نہیں آیا

    وہ پوچھتا تھا مری آنکھ بھیگنے کا سبب

    مجھے بہانہ بنانا بھی تو نہیں آیا

    وسیمؔ دیکھنا مڑ مڑ کے وہ اسی کی طرف

    کسی کو چھوڑ کے جانا بھی تو نہیں آیا

    مأخذ :
    • کتاب : Mera Kiya (Pg. 91)
    • Author : Waseem Barelvi
    • مطبع : Maktaba Jamia Ltd. (2007)
    • اشاعت : 2007

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY