نہیں کوئی خبر کرنا نہیں ہے

عادل حیات

نہیں کوئی خبر کرنا نہیں ہے

عادل حیات

MORE BY عادل حیات

    نہیں کوئی خبر کرنا نہیں ہے

    ہمیں کچھ بھی اثر کرنا نہیں ہے

    بہت ہی خوب صورت زندگی ہے

    مگر آساں بسر کرنا نہیں ہے

    ہوا کو راستہ گر مل بھی جائے

    چراغوں پر اثر کرنا نہیں ہے

    گھروندے ہی میں اپنے لوٹ جاؤں

    کہ خود کو در بدر کرنا نہیں ہے

    ہزاروں راستے تو منتظر ہیں

    تخیل میں سفر کرنا نہیں ہے

    لبھاتے ہیں نئے پودے ہمیں بھی

    مگر سب کو شجر کرنا نہیں ہے

    ہیں اب بھی عشق کی باتیں گوارہ

    لہو دل کو مگر کرنا نہیں ہے

    اگر ہے زندگی سے پیار عادلؔ

    مہم کوئی بھی سر کرنا نہیں ہے

    مآخذ:

    • کتاب : Sitara Sang (Gazals) (Pg. 37)
    • Author : Adil Hayat
    • مطبع : Nirali Duniya Publications,Darya Ganj, Delhi (2004)
    • اشاعت : 2004

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY