نئی مشکل کوئی درپیش ہر مشکل سے آگے ہے

خوشبیر سنگھ شادؔ

نئی مشکل کوئی درپیش ہر مشکل سے آگے ہے

خوشبیر سنگھ شادؔ

MORE BYخوشبیر سنگھ شادؔ

    نئی مشکل کوئی درپیش ہر مشکل سے آگے ہے

    سفر دیوانگی کا عشق کی منزل سے آگے ہے

    مجھے کچھ دیر میں پھر یہ کنارا چھوڑ دینا ہے

    میں کشتی ہوں سفر میرا ہر اک ساحل سے آگے ہے

    کھڑے ہیں سانس روکے سب تماشہ دیکھنے والے

    کہ اب مظلوم بس کچھ ہی قدم قاتل سے آگے ہے

    مجھے اب روح تک اک درد سا محسوس ہوتا ہے

    تو کیا وسعت مرے احساس کی اس دل سے آگے ہے

    مرے اس کار بے مصرف کو کیا سمجھے گی یہ دنیا

    مری یہ سعئ لا حاصل ہر اک حاصل سے آگے ہے

    یہ اکثر شادؔ رکھتی ہے مجھے خوش رنگ لمحوں سے

    مری تنہائی تیری رونق محفل سے آگے ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY