نجات کے لیے روز سیاہ مانگتی ہے

محمد اظہار الحق

نجات کے لیے روز سیاہ مانگتی ہے

محمد اظہار الحق

MORE BYمحمد اظہار الحق

    نجات کے لیے روز سیاہ مانگتی ہے

    زمین اہل زمیں سے پناہ مانگتی ہے

    بھرا نہ اطلس و مرمر سے پیٹ خلقت کا

    یہ بد نہاد اب آب و گیاہ مانگتی ہے

    ریاضتوں سے فرشتہ صفت تو ہو نہ سکی

    محبت آئی ہے تاب گناہ مانگتی ہے

    وہ رنگ کوچہ و بازار ہے کہ اب بستی

    گھروں سے دور الگ قتل گاہ مانگتی ہے

    رگوں میں دوڑتا پھرتا ہے عجز صدیوں کا

    رعیت آج بھی اک بادشاہ مانگتی ہے

    مآخذ:

    • کتاب : Pakistani Adab (Pg. 667)
    • Author : Dr. Rashid Amjad
    • مطبع : Pakistan Academy of Letters, Islambad, Pakistan (2009)
    • اشاعت : 2009

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY