نسیم ہے ترے کوچے میں اور صبا بھی ہے

محمد رفیع سودا

نسیم ہے ترے کوچے میں اور صبا بھی ہے

محمد رفیع سودا

MORE BYمحمد رفیع سودا

    نسیم ہے ترے کوچے میں اور صبا بھی ہے

    ہماری خاک سے دیکھو تو کچھ رہا بھی ہے

    ترا غرور مرا عجز تا کجا ظالم

    ہر ایک بات کی آخر کچھ انتہا بھی ہے

    جلے ہے شمع سے پروانہ اور میں تجھ سے

    کہیں ہے مہر بھی جگ میں کہیں وفا بھی ہے

    خیال اپنے میں گو ہوں ترانہ سنجاں مست

    کراہنے کے دلوں کو کبھی سنا بھی ہے

    زبان شکوہ سوا اب زمانہ میں ہیہات

    کوئی کسو سے بہم دیگر آشنا بھی ہے

    ستم روا ہے اسیروں پہ اس قدر صیاد

    چمن چمن کہیں بلبل کی اب نوا بھی ہے

    سمجھ کے رکھیو قدم خار دشت پر مجنوں

    کہ اس نواح میں سوداؔ برہنہ پا بھی ہے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    مہدی حسن

    مہدی حسن

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY