نظر مت بوالہوس پر کر ارے چنچل سنبھال انکھیاں

عبید اللہ خاں مبتلا

نظر مت بوالہوس پر کر ارے چنچل سنبھال انکھیاں

عبید اللہ خاں مبتلا

MORE BYعبید اللہ خاں مبتلا

    نظر مت بوالہوس پر کر ارے چنچل سنبھال انکھیاں

    کہ اس بد فعل سوں کھنچیں گی آخر انفعال انکھیاں

    جدائی سے ہووے مفرور جاں قالب کے صوبہ سوں

    اپس دیدار سوں کرتی ہیں پھر اس کوں بحال انکھیاں

    نگاہ گرم گل رو سیں ہوا روشن یو مالی پر

    کہ اب سورج نمن نرگس پہ لادیں گی زوال انکھیاں

    ہوا معلوم بد کاراں طرف نت سین کرنے سوں

    کہ رجوارے میں بستی ہیں سریجن کی جہال انکھیاں

    جہاں کے راوتاں سوں غمزہ کے نیزہ کوں چمکا کر

    نظر بازی کے میداں بیچ کرتی ہیں قتال انکھیاں

    مروت کا اثر دستا نہیں اس شوخ چتون میں

    مگر رکھتی ہیں عاشق سوں اپس دل میں ملال انکھیاں

    سیہ چشمی ہوئی ظاہر للن کی چشم پوشی میں

    چھپاتی ہیں اپس مشتاق سوں اپنا جمال انکھیاں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY