نظر نواز نظاروں میں جی نہیں لگتا

شکیل بدایونی

نظر نواز نظاروں میں جی نہیں لگتا

شکیل بدایونی

MORE BYشکیل بدایونی

    نظر نواز نظاروں میں جی نہیں لگتا

    وہ کیا گئے کہ بہاروں میں جی نہیں لگتا

    شب فراق کو اے چاند آ کے چمکا دے

    نظر اداس ہے تاروں میں جی نہیں لگتا

    غم حیات کے مارے تو ہم بھی ہیں لیکن

    غم حیات کے ماروں میں جی نہیں لگتا

    نہ پوچھ مجھ سے ترے غم میں کیا گزرتی ہے

    یہی کہوں گا ہزاروں میں جی نہیں لگتا

    کچھ اس قدر ہے غم زندگی سے دل مایوس

    خزاں گئی تو بہاروں میں جی نہیں لگتا

    فسانۂ شب غم ختم ہونے والا ہے

    شکیلؔ چاند ستاروں میں جی نہیں لگتا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    شانتی ہیرانند

    شانتی ہیرانند

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نظر نواز نظاروں میں جی نہیں لگتا نعمان شوق

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY