نیکیاں تو آپ کی ساری بھلا دی جائیں گی

دنیش کمار

نیکیاں تو آپ کی ساری بھلا دی جائیں گی

دنیش کمار

MORE BYدنیش کمار

    نیکیاں تو آپ کی ساری بھلا دی جائیں گی

    غلطیاں رائی بھی ہوں پربت بنا دی جائیں گی

    روشنی درکار ہوگی جب بھی محلوں کو ذرا

    شہر کی سب جھگیاں پل میں جلا دی جائیں گی

    پھر کوئی تصویر حاکم کو لگی ہے آئنہ

    انگلیاں طے ہیں مصور کی کٹا دی جائیں گی

    ان کے ارمانوں کی پروا اہل محفل کو کہاں

    صبح ہوتے ہی سبھی شمعیں بجھا دی جائیں گی

    نام پتھر پر شہیدوں کے لکھے تو جائیں گے

    ہاں مگر قربانیاں ان کی بھلا دی جائیں گی

    کون مرجھانے سے روکے گا گلوں کو اے دنیشؔ

    بلبلیں ہی باغ سے جب سب اڑا دی جائیں گی

    مآخذ :
    • کتاب : Word File Mail By Salim Saleem

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY