نبھے گی کس طرح دل سوچتا ہے

فضیل جعفری

نبھے گی کس طرح دل سوچتا ہے

فضیل جعفری

MORE BYفضیل جعفری

    نبھے گی کس طرح دل سوچتا ہے

    عجب لڑکی ہے جب دیکھو خفا ہے

    بہ ظاہر ہے اسے بھی پیار ویسے

    دلوں کے بھید سے واقف خدا ہے

    یہ تنہائی کا کالا سرد پتھر

    اسی سے عمر بھر سر پھوڑنا ہے

    مگر اک بات دونوں جانتے ہیں

    نہ کچھ اس نے نہ کچھ ہم نے کہا ہے

    نہیں ممکن اگر ساتھ عمر بھر کا

    یہ پل دو پل کا ملنا کیا برا ہے

    گھنے جنگل میں جیسے شام اترے

    کوئی یوں جعفریؔ یاد آ رہا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY