پانی میں کنکر برسایا کرتے تھے

سوربھ شیکھر

پانی میں کنکر برسایا کرتے تھے

سوربھ شیکھر

MORE BYسوربھ شیکھر

    پانی میں کنکر برسایا کرتے تھے

    وہ دن جب ہم لمحے ضائع کرتے تھے

    ہوڑ ہوا سے اکثر لگتی تھی اپنی

    اکثر اس کو دھول چٹایا کرتے تھے

    دیکھ کے ہم کو راہ گزر مسکاتی تھی

    پیڑ بھی آگے بڑھ کر چھایا کرتے تھے

    دھوپ بٹورا کرتے تھے ہم سارا دن

    شام کو بانٹ کے گھر لے جایا کرتے تھے

    آج گھٹا افسردہ کرتی ہے ہم کو

    ہم بارش میں خوب نہایا کرتے تھے

    ایک یہی ہم دیکھیں سب خاموشی سے

    ایک یہی ہم شور مچایا کرتے تھے

    سوربھؔ شب تھی ایک ورق سادہ جس پر

    لکھ لکھ کر ہم خواب مٹایا کرتے تھے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY