پایا جب سے زخم کسی کو کھونے کا

حسن اکبر کمال

پایا جب سے زخم کسی کو کھونے کا

حسن اکبر کمال

MORE BYحسن اکبر کمال

    پایا جب سے زخم کسی کو کھونے کا

    سیکھا فن ہم نے بے آنسو رونے کا

    بڑوں نے اس کو چھین لیا ہے بچوں سے

    خبر نہیں اب کیا ہو حال کھلونے کا

    ہم سفروں سے ترک سفر کو کہتا ہوں

    ڈر ہے راہ میں ایسی باتیں ہونے کا

    رو دینا بھی مجبوری تو ہے لیکن

    لطف الگ ہے دل میں آنسو بونے کا

    میٹھے خواب بھی ہم دیکھیں گر موسم ہو

    لمبی گہری میٹھی نیندیں سونے کا

    میرے لیے کیا میرے دم آخر تک ہے

    کھیل یہ سارا ہونے اور نہ ہونے کا

    مأخذ :
    • کتاب : meyaar (Pg. 328)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY