پڑے ہوئے ہیں مرے جسم و جاں مرے پیچھے

محمد اظہار الحق

پڑے ہوئے ہیں مرے جسم و جاں مرے پیچھے

محمد اظہار الحق

MORE BYمحمد اظہار الحق

    پڑے ہوئے ہیں مرے جسم و جاں مرے پیچھے

    ہے ایک لشکر غارت گراں مرے پیچھے

    پس وفات یہ بے دستخط مری تحریر

    نہیں ہے اور کوئی بھی نشاں مرے پیچھے

    مرے ملازم و خرگاہ اسپ اور شطرنج

    سب آئیں نظم سے ماتم کناں مرے پیچھے

    گزر رہی ہے اندھیرے میں اس بدن پر کیا

    نہ کھل سکے گی یہی چیستاں مرے پیچھے

    اٹھی ہوئی مرے سر پر ازل سے ہے تلوار

    کھنچی ہوئی ہے ابد سے کماں مرے پیچھے

    گھرا ہوا ہوں جنم دن سے اس تعاقب میں

    زمین آگے ہے اور آسماں مرے پیچھے

    مآخذ:

    • کتاب : Range-e-Gazal (Pg. 329)
    • Author : shahzaad ahmad
    • مطبع : Ali Printers, 19-A Abate Road, Lahore (1988)
    • اشاعت : 1988

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY