پڑیں یہ کس کے جلوے پر نگاہیں

شرف مجددی

پڑیں یہ کس کے جلوے پر نگاہیں

شرف مجددی

MORE BYشرف مجددی

    پڑیں یہ کس کے جلوے پر نگاہیں

    نگاہیں بن گئیں خود جلوہ گاہیں

    کہے مجھ سے نہ کوئی ضبط غم کو

    ابھی منہ سے نکل جائیں گی آہیں

    سلوک اپنا ہے ان کے نقش پا پر

    یہی ہیں منزل عرفاں کی راہیں

    انہیں دیکھیں وہ دیکھیں یا نہ دیکھیں

    انہیں چاہیں وہ چاہیں یا نہ چاہیں

    چلائے تھے جنہوں نے تیر دل پر

    ہم آنکھوں میں لئے ہیں وہ نگاہیں

    نتیجہ ہے یہ آہیں کھینچنے کا

    ہمیں کھینچے لئے پھرتی ہیں آہیں

    شرفؔ کس نے یہ ڈالی آنکھ میں آنکھ

    نگاہوں سے نکل آئیں نگاہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY