پہلے کچھ دن مرے زخموں کی نمائش ہوگی

عبید الرحمان

پہلے کچھ دن مرے زخموں کی نمائش ہوگی

عبید الرحمان

MORE BYعبید الرحمان

    پہلے کچھ دن مرے زخموں کی نمائش ہوگی

    پھر مرے حال پہ اس بت کی نوازش ہوگی

    ہاں بظاہر تو دھرا جائے گا قاتل لیکن

    پس پردہ اسی قاتل کی سفارش ہوگی

    پیاسی دھرتی یوں ہی پیاسی ہی رہے گی یارو

    اور دریا پہ مسلسل یہاں بارش ہوگی

    جس طرح ٹوٹے ہوئے پتے بکھر جاتے ہیں

    ہم بکھر جائیں اسی طور یہ سازش ہوگی

    کس کو معلوم ہے جو راز مشیت ہے عبیدؔ

    جانے کس بات پہ کس شخص کی بخشش ہوگی

    مآخذ :
    • کتاب : Aawaz Ke Saye (Poetry) (Pg. 69)
    • Author : Obaidur Rahman
    • مطبع : Sehla Obaid (2001)
    • اشاعت : 2001

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY