پریشانی ہے جی گھبرا رہا ہے

افسر میرٹھی

پریشانی ہے جی گھبرا رہا ہے

افسر میرٹھی

MORE BYافسر میرٹھی

    پریشانی ہے جی گھبرا رہا ہے

    کوئی دھیمے سروں میں گا رہا ہے

    کہوں کیا حال ناکام محبت

    تمناؤں سے جی بہلا رہا ہے

    کوئی شب کی خموشی میں ہے گریاں

    تصور میں کوئی سمجھا رہا ہے

    تصور کی یہ مقصد آفرینی

    میں سمجھا کوئی سچ مچ آ رہا ہے

    جو رستہ خلد میں نکلا ہے جا کر

    وہ دوزخ سے نکل کر جا رہا ہے

    مآخذ:

    • کتاب : Jadeed Shora-e-Urdu (Pg. 600)
    • Author : Dr. Abdul Wahid
    • مطبع : Feroz sons Printers Publishers and Stationers

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY