پھر اس کے بعد کا کوئی نہ ہو گزر مجھ میں

آزاد گلاٹی

پھر اس کے بعد کا کوئی نہ ہو گزر مجھ میں

آزاد گلاٹی

MORE BYآزاد گلاٹی

    پھر اس کے بعد کا کوئی نہ ہو گزر مجھ میں

    کبھی تو ایک پل اے دوست یوں ٹھہر مجھ میں

    جو خود میں جھانکوں تو سناٹے سنسناتے ہیں

    کوئی تو کر گیا ہے رات یوں بسر مجھ میں

    بھٹکتا پھرتا ہوں سنسان رہ گزاروں پر

    بسا ہوا ہے کسی یاد کا نگر مجھ میں

    عجب نہیں کئی موتی بھی تیرے ہاتھ لگیں

    ذرا لے کام تو ہمت سے اور اتر مجھ میں

    میں تیری ذات کا سایا ہوں تیرے اندر ہوں

    مری تلاش سر رہگزر نہ کر مجھ میں

    مآخذ :
    • کتاب : Dasht-e-Sada (Pg. 85)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY