پھر سے لہو لہو در و دیوار دیکھ لے

صادق

پھر سے لہو لہو در و دیوار دیکھ لے

صادق

MORE BYصادق

    پھر سے لہو لہو در و دیوار دیکھ لے

    جو بھی دکھائے وقت وہ ناچار دیکھ لے

    اپنے گلے پہ چلتی چھری کا بھی دھیان رکھ

    وہ تیز ہے یا کند ذرا دھار دیکھ لے

    پھر چھوٹنے سے پہلے ہی اپنے وجود کو

    موجود بچپنوں میں گرفتار دیکھ لے

    گھستا چلا ہے پیٹ میں ہر آدمی کا سر

    تجھ سے بھی ہو سکے گا نہ انکار دیکھ لے

    یوں روز روز کرتے ادا کاریاں تری

    صورت بدل گئی ہے مرے یار دیکھ لے

    مأخذ :
    • کتاب : kushaad (Pg. 68)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY