پھر اسے خواب میں دیکھا ہے خدا خیر کرے

نامی نادری

پھر اسے خواب میں دیکھا ہے خدا خیر کرے

نامی نادری

MORE BYنامی نادری

    پھر اسے خواب میں دیکھا ہے خدا خیر کرے

    وہ مرے ذہن پہ چھایا ہے خدا خیر کرے

    اس نے پھر پیار جتایا ہے خدا خیر کرے

    کوئی تو نیک ارادہ ہے خدا خیر کرے

    ہر گھڑی ایک دھماکا ہے خدا خیر کرے

    ہر نفس خون کا پیاسا ہے خدا خیر کرے

    یہ کسی کی بھی ہوئی ہے تو بتائے کوئی

    زندگی ایک چھلاوا ہے خدا خیر کرے

    مصنوعی چہرا لگائے ہوئے ہے ہر کوئی

    اب دکھاوا ہی دکھاوا ہے خدا خیر کرے

    غالباً زندہ جلایا گیا ہوگا کوئی

    چوک میں کیسا دھواں سا ہے خدا خیر کرے

    پھر کوئی گل وہ کھلائے گا یقیناً یارو

    مسکراتا ہوا آیا ہے خدا خیر کرے

    ہم نے جس شخص پہ یہ زیست نچھاور کر دی

    اب وہی آنکھیں دکھاتا ہے خدا خیر کرے

    شکوہ سنجی کا زمانہ نہیں یہ اے نامہ

    وقت نازک ہے بڑھاپا ہے خدا خیر کرے

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے