aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

پوچھی نہ چشم تر کی نہ آہ رسا کی بات

اسد ملتانی

پوچھی نہ چشم تر کی نہ آہ رسا کی بات

اسد ملتانی

MORE BYاسد ملتانی

    پوچھی نہ چشم تر کی نہ آہ رسا کی بات

    کرتے رہے وہ مجھ سے بس آب و ہوا کی بات

    کیا بات میں سے بات نکلتی چلی گئی

    تھا مدعا یہی کہ نہ ہو مدعا کی بات

    رسم و رہ جہاں کی سفارش رہی مگر

    پھر بھی تو آنے پائی نہ اہل وفا کی بات

    کیا رسم التفات زمانے سے اٹھ گئی

    سب کی زباں پر ہے ستم ناروا کی بات

    طوفاں کا خطرہ سن کے نہ کر خوف اس قدر

    آخر خدا کی بات نہیں ناخدا کی بات

    گویا اسدؔ ہے دل کی زباں دل کا آئنہ

    کس درجہ صاف ہوتی ہے اہل صفا کی بات

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے