پوچھتا کون ہے ڈرتا ہے تو اے یار عبث

بیاں احسن اللہ خان

پوچھتا کون ہے ڈرتا ہے تو اے یار عبث

بیاں احسن اللہ خان

MORE BYبیاں احسن اللہ خان

    پوچھتا کون ہے ڈرتا ہے تو اے یار عبث

    قتل کرنے سے مرے ہے تجھے انکار عبث

    کیا مری آنکھ عدم بیچ لگی تھی اے چرخ

    کیا اس خواب سے تو نے مجھے بیدار عبث

    وصل ہی اس کا دوا ہے مری بیماری کو

    اور کچھ کرتے ہیں تدبیر یہ غم خوار عبث

    یار تنہا ہے پھر ایسا نہیں ملنے کا وقت

    شرم ہوتی ہے میری مانع گفتار عبث

    اور بھی ان نے بیاںؔ ظلم کچھ افزود کیا

    کیا اس شوخ سے تیں عشق کا اظہار عبث

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY