پیار کا پہلا خط لکھنے میں وقت تو لگتا ہے

ہستی مل ہستی

پیار کا پہلا خط لکھنے میں وقت تو لگتا ہے

ہستی مل ہستی

MORE BY ہستی مل ہستی

    پیار کا پہلا خط لکھنے میں وقت تو لگتا ہے

    نئے پرندوں کو اڑنے میں وقت تو لگتا ہے

    جسم کی بات نہیں تھی ان کے دل تک جانا تھا

    لمبی دوری طے کرنے میں وقت تو لگتا ہے

    گانٹھ اگر لگ جائے تو پھر رشتے ہوں یا ڈوری

    لاکھ کریں کوشش کھلنے میں وقت تو لگتا ہے

    ہم نے علاج زخم دل تو ڈھونڈ لیا لیکن

    گہرے زخموں کو بھرنے میں وقت تو لگتا ہے

    مآخذ:

    • کتاب : Kuchh Aur Tarah Se Bhi (Gazal) (Pg. 91)
    • Author : Hastimal Hasti
    • مطبع : Vani Prakashan (2005)
    • اشاعت : 2005

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY