قاعدے بازار کے اس بار الٹے ہو گئے

نعمان شوق

قاعدے بازار کے اس بار الٹے ہو گئے

نعمان شوق

MORE BYنعمان شوق

    قاعدے بازار کے اس بار الٹے ہو گئے

    آپ تو آئے نہیں پر پھول مہنگے ہو گئے

    ایک دن دونوں نے اپنی ہار مانی ایک ساتھ

    ایک دن جس سے جھگڑتے تھے اسی کے ہو گئے

    مجھ کو اس حسن نظر کی داد ملنی چاہئے

    پہلے سے اچھے تھے جو کچھ اور اچھے ہو گئے

    مدتوں سے ہم نے کوئی خواب بھی دیکھا نہیں

    مدتوں اک شخص کو جی بھر کے دیکھے ہو گئے

    بس ترے آنے کی اک افواہ کا ایسا اثر

    کیسے کیسے لوگ تھے بیمار اچھے ہو گئے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق,

    نعمان شوق

    قاعدے بازار کے اس بار الٹے ہو گئے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY