قریب بھی تو نہیں ہو کہ آ کے سو جاؤ

رؤف رضا

قریب بھی تو نہیں ہو کہ آ کے سو جاؤ

رؤف رضا

MORE BYرؤف رضا

    قریب بھی تو نہیں ہو کہ آ کے سو جاؤ

    ستاروں جاؤ کہیں اور جا کے سو جاؤ

    تھکن ضروری نہیں رات بھی ضروری نہیں

    کوئی حسین بہانہ بنا کے سو جاؤ

    کہانیاں تھی وو راتیں کہانیاں تھے وو لوگ

    چراغ گل کرو اور بجھ بجھا کے سو جاؤ

    طریق کار بدلنے سے کچھ نیا ہوگا

    جو دور ہے اسے نزدیک لا کے سو جاؤ

    خسارے جتنے ہوئے ہیں وو جاگنے سے ہوئے

    سو ہر طرف سے صدا ہے کے جا کے سو جاؤ

    یہ کار شعر بھی اک کار خیر جیسا ہے

    کے طاق طاق جلو لو بڑھا کے سو جاؤ

    اداس رہنے کی عادت بہت بری ہے تمہیں

    لطیفے یاد کرو ہنس ہنسا کے سو جاؤ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY