رنگ سے پیرہن سادہ حنائی ہو جائے

مرزارضا برق ؔ

رنگ سے پیرہن سادہ حنائی ہو جائے

مرزارضا برق ؔ

MORE BYمرزارضا برق ؔ

    رنگ سے پیرہن سادہ حنائی ہو جائے

    پہنے زنجیر جو چاندی کی طلائی ہو جائے

    خود فروشی کو جو تو نکلے بہ شکل یوسف

    اے صنم تیری خریدار خدائی ہو جائے

    خط توام کی طرح عاشق و معشوق ہیں ایک

    دونوں بے کار ہیں جس وقت جدائی ہو جائے

    تنگی گوشۂ عزلت ہے بیاں سے باہر

    نہیں امکان کہ چیونٹی کی سمائی ہو جائے

    یہی ہر عضو سے آتی ہے صدا فرقت میں

    وقت یہ وہ ہے جدا بھائی سے بھائی ہو جائے

    اپنی ہی آگ میں اے برقؔ جلا جاتا ہوں

    عنصر خاک ہو تربت جو لڑائی ہو جائے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے