روشنی کے روپ میں خوشبو میں یا رنگوں میں آ

مظفر وارثی

روشنی کے روپ میں خوشبو میں یا رنگوں میں آ

مظفر وارثی

MORE BYمظفر وارثی

    روشنی کے روپ میں خوشبو میں یا رنگوں میں آ

    میں تجھے پہچان لوں گا کتنے ہی چہروں میں آ

    بند آنکھوں میں بھی کیا ہوگی تری بے پردگی

    چھین لے مجھ سے یہ نیندیں یا مرے خوابوں میں آ

    ناچ اٹھے رقاصۂ جاں دھڑکنوں کی تھاپ پر

    ساز ہاتھوں میں اٹھائے دل کے سناٹوں میں آ

    تو جو شرماتا ہے میرے سامنے آتے ہوئے

    اوڑھ لے میرا تصور پھر مری باہوں میں آ

    کر دیے ہیں زندگی نے مختلف حصے مرے

    مجھ سے ملنا ہے اگر بٹ کر کئی سایوں میں آ

    شہر میں بھی خاک اڑاتی پھر رہی ہیں وحشتیں

    چھوڑ ویرانے مظفرؔ اب گلی کوچوں میں آ

    مأخذ :
    • کتاب : Kalam-e- muzaffar warsi (Pg. 40)

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY