روشنیوں سے بھر دیا ہے مجھے

عدنان خالد

روشنیوں سے بھر دیا ہے مجھے

عدنان خالد

MORE BYعدنان خالد

    روشنیوں سے بھر دیا ہے مجھے

    اس نے خود جیسا کر دیا ہے مجھے

    آنکھ جھپکوں تو کانپتا ہے دل

    نیند نے ایسا ڈر دیا ہے مجھے

    مجھ سے امید ہے بھلائی کی

    اور خود تو نے شر دیا ہے مجھے

    آپ سے پہلے یوں نہیں تھا میں

    آپ نے جیسا کر دیا ہے مجھے

    یوں کیا ہم کو لازم و ملزوم

    سنگ اس کو تو سر دیا ہے مجھے

    کیا توازن اڑان میں رکھوں

    اس نے بس ایک پر دیا ہے مجھے

    ان درندوں میں رکھنے کا مطلب

    اس نے آزاد کر دیا ہے مجھے

    کیا عجب دی ہے بے رخی کی سزا

    اس نے چوکھٹ پہ دھر دیا ہے مجھے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY