روز فلک سے نم برسیں گے

کنول ضیائی

روز فلک سے نم برسیں گے

کنول ضیائی

MORE BYکنول ضیائی

    روز فلک سے نم برسیں گے

    پیار کے بادل کم برسیں گے

    موت نے آنچل جب لہرایا

    آنگن میں ماتم برسیں گے

    قطرہ قطرہ خون کا بن کر

    اس دھرتی پر ہم برسیں گے

    زلف کھلے گی پروائی کی

    گلشن پر موسم برسیں گے

    اب کے برس برسات میں بھائی

    دکھ برسیں گے غم برسیں گے

    بن کر رسوائی کے آنسو

    تیری آنکھ سے ہم برسیں گے

    ہم وہ دیوانے ہیں جن پر

    پتھر اب پیہم برسیں گے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY