صاف قاصد کو واں جواب ملا

امام بخش ناسخ

صاف قاصد کو واں جواب ملا

امام بخش ناسخ

MORE BYامام بخش ناسخ

    صاف قاصد کو واں جواب ملا

    میرے خط کا یہی جواب ملا

    آج ذرے کو آفتاب ملا

    کہ مجھے ساغر شراب ملا

    کہتے ہیں صبح دم وہ دیکھ کے منہ

    جائے آئینہ آفتاب ملا

    بے ثبات اپنی بزم عیش جو ہے

    شیشۂ مے کی جا حباب ملا

    بخت نے پائی جب کہ بیداری

    میرے پائے طلب کو خواب ملا

    ہو گیا دل جو آبلہ ساقی

    سمجھے ہم شیشۂ شراب ملا

    گور بھی کھد رہی ہے مہر کے ساتھ

    آپ خوش ہو گئے خطاب ملا

    کب سے ناسخؔ یہ جستجو ہے مجھے

    آج وہ خانماں خراب ملا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY