صاحب دلوں سے راہ میں آنکھیں ملا کے دیکھ

فضیل جعفری

صاحب دلوں سے راہ میں آنکھیں ملا کے دیکھ

فضیل جعفری

MORE BYفضیل جعفری

    صاحب دلوں سے راہ میں آنکھیں ملا کے دیکھ

    رکھتا ہے تو بھی دل تو اسے آزما کے دیکھ

    پہچاننے کی پیار کو کوشش کبھی تو کر

    خود کو کبھی تو اپنے بدن سے ہٹا کے دیکھ

    یا لذتوں کو زہر سمجھ اور دور رہ

    یا شعلۂ گناہ میں دامن جلا کے دیکھ

    ہر چند ریگ زار سہی زندگی مگر

    پل بھر کو اپنے جسم کا جادو جگا کے دیکھ

    سائے کی طرح ساتھ چلے گی کوئی صدا

    سنسان جنگلوں میں اکیلے بھی جا کے دیکھ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY