ساقی کی نوازش نے تو اور آگ لگا دی

ماہر القادری

ساقی کی نوازش نے تو اور آگ لگا دی

ماہر القادری

MORE BYماہر القادری

    ساقی کی نوازش نے تو اور آگ لگا دی

    دنیا یہ سمجھتی ہے مری پیاس بجھا دی

    ایک بار تجھے عقل نے چاہا تھا بھلانا

    سو بار جنوں نے تری تصویر دکھا دی

    اس بات کو کہتے ہوئے ڈرتے ہیں سفینے

    طوفاں کو خودی دامن ساحل نے ہوا دی

    مانا کہ میں پامال ہوا زخم بھی کھائے

    اوروں کے لیے راہ تو آسان بنا دی

    اتنی تو مئے ناب میں گرمی نہیں ہوتی

    ساقی نے کوئی چیز نگاہوں سے ملا دی

    وہ چین سے بیٹھے ہیں مرے دل کو مٹا کر

    یہ بھی نہیں احساس کہ کیا چیز مٹا دی

    اے باد چمن تجھ کو نہ آنا تھا قفس میں

    تو نے تو مری قید کی میعاد بڑھا دی

    لے دے کے ترے دامن امید میں ماہرؔ

    ایک چیز جوانی تھی جوانی بھی لٹا دی

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    ماہر القادری

    ماہر القادری

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY